آج یونان ترقی کے راستے پر گامزن ہے: وزیراعظم الیکسس چپراس۔

  • 148
  •  
  •  
  •  
  •  
    148
    Shares

تھیسلونیکی میں انٹرنیشنل نمائش سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم الیکسس چپراس نے کہا کہ تین سال پہلے اگست 2015 میں جو میمورنڈم سائن کیا گیا تھا آج یونان اس میمورنڈم سے نکل چکا ہے اور ترقی کے راستے پر گامزن ہے۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ تین سال پہلے جو مشکل فیصلے کیے گئے تھے ان کا پھل آج مل رہا ہے۔

اور یہ سب کچھ ان لوگوں کی قربانیوں کی وجہ سے ممکن ہوسکا ہے جنوں نے بہت سی مشکلات جھیلیں۔

وزیراعظم کا مزید کہنا تھا کہ آج میں یقین سے کہ سکتا ہوں کہ تین سال پہلے کیے گئے فیصلے بالکل سہی تھے اور یہ یونان کے حق میں بہترین ثابت ہوئے۔اس وقت کیے گئے فیصلوں کے بارے میں بہت سے لوگوں کی جانب سے ہم پر تنقید ہوئی۔ ہماری راہ میں مشکلات کھڑی کی گئیں ہمارے فیصلوں کو غلط کہا گیا لیکن آج وقت نے ثابت کر دیا کہ وہ یونان کی ترقی کی طرف ایک قدم ثابت ہوئے ہیں۔

آج یونان اپنے پیروں پر کھڑا ہے اور اسے آئی ایم ایف یا یورپین یونین سے کسی مدد کی ضرورت نہیں ہے ۔اور ہماری کوشش ہوگی کہ ہم یونان کا کھویا ہوا وقار بحال کر سکیں۔

انہوں نے کہا کہ مختلف زرائع موصول ہونے والے ڈیٹا کو سامنے رکھتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے کہ یونان میں بےروزگاری کم ہو رہی ہے 2015 میں یونان میں بے روزگاری کی شرح 27 فیصد تھی جو اب کم ہوکہ1. 19 فیصد رہ چکی ہے۔

ان تین سالوں میں کیے گئے اقدامات کی وجہ سے یونان میں شرح نمو آہستہ آہستہ بڑھ رہی ہے اور تین سال میں تین لاکھ نوکریاں پیدا کی گئی۔جن میں سے 70 فیصد نوکریاں فل ٹائم تھیں۔

وزیراعظم نے کہا کہ ہم سب نے مل کر یونان کو ایک نیا یونان بنانا ہے جس میں سب کے لیے روزگار ہو اور جس یونان میں ہر کوئی سر اٹھا کرجی سکے۔

انہوں نے کہا کہ ہماری کوشش ہوگی کہ یونان سے دوسرے ملکوں میں گئے ہوئے ہمارے سائنسدان واپس آکر یونان کی خدمت کر یں۔اورانہیں ان کی اہلیت کے مطابق نوکریاں دی جائیں۔

وزیراعظم نے کہا کہ یکم جنوری 2019 سے 4500 لوگوں کو تعلیم کے شعبے میں نوکریاں دی جائیں گی انہوں نے مزید کہا کہ 3000 ہزار لوگوں کو صحت کے شعبے میں نوکریاں دی جائیں گی۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ یکم جنوری 2019 سے انکم کی بنیاد پر لوگوں کو کرائے میں 70 سے لے کر 200 یورو دیئے جائیں گے ۔اس مدد کی وجہ سے نوجوان جوڑوں کو اپنا گھر آباد کرنے میں مدد ملے گی

آخر میں وزیراعظم کا کہنا تھا کہ جس طرح ہم نے پچھلے 3 سالوں میں دنیا کو دکھایا کہ ہم ایک قوم ہیں اور مل جل کر ہم ہیں اس مشکل سے نکل سکتے ہیں اسی طرح ہمیں آنے والے سالوں میں مل جل کر کام کرنا ہوگا اور یونان کو ایک باوقار ملک بنانا ہو گا ۔


  • 148
  •  
  •  
  •  
  •  
    148
    Shares

اترك تعليقاً

This site is protected by wp-copyrightpro.com