بریگزٹ بحران : لیبرپارٹی میں دوسرے ریفرنڈم پرتقسیم گہری ہوگئی۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

لندن بریگزٹ بحران کے دوران لیبرپارٹی دوسرے ریفرنڈم پر تقسیم ہوگئی۔

لیبر رہنما نے کہا ہے کہ اس بحران سے نکلنے کا واحد راستہ کسی بھی قسم کا پبلک ووٹ ہے، خواہ وہ الیکشن ہو یا کہ ریفرنڈم۔ میرر کے مطابق دوسرے ریفرنڈم کے معاملے پر لیبر میں تقسیم گزشتہ روز اس وقت گہری ہوگئی جب جیرمی کوربن نے کہا کہ بریگزٹ بحران سے باہر آنے کا واحد راستہ ایک پبلک ووٹ ہے۔

ایسا محسوس ہوتا ہے کہ لیبر رہنما گزشتہ شب خودساختہ پبلک ووٹ کے موقف سے بہت قریب ہوگئے جب انہوں نے کہا کہ دوبارہ عوام میں جا کر ان کی رائے لینے سے ہی یہ بحران حل ہوسکے گا، جس نے پورے ملک کو اپنی لپیٹ میں لے رکھا ہے۔

ریفرنڈم کی حامی ٹی ایس ایس اے یونین اور پیپلز ووٹ کمپین نے دعویٰ کیا ہے کہ مسٹر کوربن کا بیان بریگزٹ پر ووٹ کے موقف پر ایک قدم آگے آنے کے مترادف ہے۔

تاہم یہ بیان دوسری یونین کے حریفوں بشمول سی ڈبلیو یو کے ڈیو وارڈ اور یونائٹ کے لین میک کلسکی کو ایک پلیٹ فارم پر لے آیا ہے، جنہوں نے دوسرے ریفرنڈم کے خلاف مسٹر کوربن کو متنبہ کیا


  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

اترك تعليقاً

This site is protected by wp-copyrightpro.com