ترکی جان بوجھ کر غیر قانونی افراد کو یونان میں داخل ہونے دے رہا ہے۔یونان کا احتجاج۔

  • 181
  •  
  •  
  •  
  •  
    181
    Shares

یونان کی حکومت نے یورپی یونین اور ترکی کو ایک مراسلہ لکھا ہے جس میں احتجاج کیا گیا ہے کہ ترکی  جان بوجھ کر غیر قانونی افراد کو یونان میں داخل ہونے کی اجازت دے رہا ہے۔

ترکی کے اس اقدام کی وجہ سے پچھلے مہینے سے یونان میں داخل ہونے والے غیر قانونی تارکین وطن کی تعداد میں بے پناہ اضافہ ہو چکا ہے جو صرف ایک مہینے میں 12000 افراد تک پہنچ چکی ہے۔

یونان کے اعلی عہدے داروں نے ترکی اور یورپین یونین سے احتجاج میں یہ بھی لکھا ہے کہ پانچ لاکھ افراد افغانستان سے ترکی میں داخل ہو چکے ہیں اور یونان کو اس بات کا خدشہ ہے کہ یہ لوگ بھی یونان میں داخل ہو جائیں گے۔

اس سلسلے میں ترکی کے اعلی عہدے داروں سے ملاقات کرنے اور ان کو صورتحال سے آگاہ کرنے کا جو طریقہ کار تھا وہ ابھی تک معطل ہے اور دونوں ممالک کے درمیان رابطہ منقطع ہونے کا فائدہ غیر قانونی تارکین وطن کو منتقل کرنے والے ایجنٹ حضرات اٹھا رہے ہیں۔

دوسری جانب یونان کے ترکی سے ملحقہ باڈر کے قریب ترین شہر تھیسلونیکی میں حالات دن بہ دن ابتر ہوتے جا رہے ہیں۔اور یونان کی حکومت غیر قانونی تارکین وطن کو یونان میں داخل ہونے سے روکنے میں ناکام نظر آتی ہے۔اس کے علاوہ جو افراد یونان میں داخل ہوچکے ہیں ان کی زندگی بھی مشکل سے مشکل ترین ہوتی جا رہی ہے اس لئے کہ پناہ گزینوں کے کیمپوں میں سہولیات کا فقدان ہے۔


  • 181
  •  
  •  
  •  
  •  
    181
    Shares

اترك تعليقاً

This site is protected by wp-copyrightpro.com