جرمنی۔کئی شہروں نے مزید مہاجرین لینے کے لئے درخواست دے دی۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

یورپ بحیرہ روم میں مہاجرین کو بچانے کی کوششیں محدود کر چکا ہے جبکہ یونان اور اٹلی پہلے سے موجود مہاجرین سے نمٹنے کی کوششوں میں ہیں۔ اب درجنوں جرمن شہر مہاجرین کو خود اپنے ہاں لانے کی اجازت طلب کر رہے ہیں۔
درجنوں جرمن شہروں کے ایک اتحادی گروپ نے پیر کے روز جرمن چانسلر انگیلا میرکل سے مطالبہ کیا ہے کہ انہیں بحیرہ روم میں ڈوبنے سے بچائے گئے مہاجرین کو فوری طور پر اپنے ہاں آباد کرنے کی اجازت فراہم کی جائے۔

برلن، پوٹسڈام، ڈسلڈورف اور دیگر شہروں کے نمائندوں کا ایک مشترکہ پریس کانفرنس میں کہنا تھا کہ مہاجرین سے متعلق موجودہ پالیسی کے جمود کو توڑنا انسانیت دوستی کا تقاضہ ہے۔ مہاجرین کو بچانے اور انہیں یورپی یونین کے ممالک میں موثر طریقے سے تقسیم کرنے کی یورپی پالیسی اختلافات کی وجہ سے جمود کا شکار ہے اور ان نمائندگان کا اِشارہ اسی پالیسی کی طرف تھا۔

مختلف جرمن شہروں نے مل کر اس منصوبے کا نام ‘محفوط بندرگاہوں والے شہر‘ رکھا ہے۔ پوٹسڈام کے میئر کا اس حوالے سے کہنا تھا، ”اگر ہمیں اجازت دی گئی تو ہم مزید افراد کو پناہ دینے کے لیے تیار ہیں۔‘‘ ان کا مزید کہنا تھا، ” فی الحال ہم دیکھ رہے ہیں کہ دیکھو اور انتظار کرو کی پالیسی جاری ہے اور یہ پالیسی کچھ نہ کرنے کے برابر ہے۔‘‘

 


  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

جواب دیں

This site is protected by wp-copyrightpro.com