خواتین مردوں سے زیادہ عمر کیسے پاتی ہیں؟

  • 38
  •  
  •  
  •  
  •  
    38
    Shares

دنیا بھر میں مردوں کے مقابلے میں خواتین زیادہ عمر پاتی ہیں۔

صحت کے عالمی ادارے ڈبلیو ایچ او کے مطابق سنہ 2016 میں عالمی سطح پر دنیا کی آبادی کی اوسط عمر 72 سال تھی لیکن جب اسے مردوں اور خواتین میں تقسیم کیا گیا تو خواتین کی عمر 74 سال دو ماہ ٹھہری جبکہ مردوں کی اوسط عمر 69 سال اور آٹھ ماہ سامنے آئی۔

سنہ 2010 کی مردم شماری کے مطابق امریکہ میں 53،364 افراد کی عمر 100 سال سے زیادہ تھی جن میں صرف 9،162 افراد مرد تھے جبکہ باقی 44،202 خواتین تھیں۔

تو آخر خواتین مردوں کے مقابلے میں زیادہ کیوں زندہ رہتی ہیں اور ان کی اس سبقت کی وجہ کیا ہے؟

آئیے ہم یہاں تین اہم وجوہات پر نظر ڈالتے ہیں:

. جین

انسانی شرح اموات کے اشاریے میں فی الحال 40 ممالک کے اعدادو شمار موجود ہیں جن میں سویڈن اور فرانس کے اعدادوشمار بھی شامل ہیں جو کہ بالترتیب سنہ 1751 اور 1816 سے موجود ہیں۔

جبکہ جاپان اور روس جیسے ممالک کے اعدادوشمار 20ویں صدی کے نصف سے ہی دستیاب ہیں۔

بہرحال تمام ممالک میں جمع ہر سال کے اعدادوشمار سے پتہ چلتا ہے کہ پیدائش پر خواتین کی طویل عمر مردوں کے مقابلے میں زیادہ ہے۔

بظاہر ایسا معلوم پڑتا ہے کہ روز ازل سے ہی مرد اپنی جینیاتی بناوٹ کے سبب نشانے پر ہیں۔

جینین

یونیورسٹی کالج لندن کے پروفیسر ڈیوڈ جیمز نے کہا: ‘نر جینین مادہ جینین کے مقابلے زیادہ شرح میں مرتے ہیں۔’

اس کی ایک ممکنہ وجہ وہ کروموزوم ہو سکتے ہیں جو ہماری جنس کا تعین کرتے ہیں۔

خوااتین میں دو ایکس (XX) کرموزوم ہوتے ہیں جبکہ مردوں میں ایک ایکس اور ایک وائی (XY) کروموزوم ہوتے ہیں۔

اور انھی کروموزوم میں جین ہوتی ہے۔

ایکس کروموزوم میں بہت ساری جینز ہوتی ہیں جو آپ کو زندہ رہنے میں معاون ہوتی ہیں۔

. پیشہ اور برتاؤ

کشیدگی والے خطے میں مردوں کی طویل عمر میں کمی واقع ہو جاتی ہے۔

لیکن جن علاقوں میں طبی سہولیات کم ہیں وہاں خواتین بچے کی ولادت کے دوران مرتی ہیں۔

سگریٹ نوشی، شراب نوشی اور حد سے زیادہ کھانا کھانا بھی چند ایسے عوامل ہیں جو صدیوں سے عورتوں اور مردوں کی عمر کے فرق کو بڑھاتے رہے ہیں۔

مثال کے طور پر روس کے مردوں کو وہاں کی خواتین کے مقابلے میں 13 سال پہلے مرنے کا خدشہ رہتا ہے اور اس کا جزوی سبب بلا نوشی ہے۔

لمبی عمر لیکن صحت مند نہیں

لیکن یہ صرف یکطرفہ سبقت یا برتری نہیں ہے۔ ہر چند کہ خواتین زیادہ دنوں تک جیتی ہیں لیکن وہ اپنی عمرکے آخری مرحلے میں بیماریوں سے زیادہ پریشان رہتی ہیں۔

مختلف ممالک میں 16 سے 60 سال کے درمیان کی خواتین اسی عمر کے مردوں کے مقابلے میں ڈاکٹر کے پاس زیادہ جاتی ہیں۔

الاباما یونیورسٹی کے سٹیون این آسٹڈ اور کیتھلین ای فیشر نے سیل پریس نامی طبی جریدے میں شائع اپنے ایک مضمون میں کہا ہے کہ ‘مغربی معاشرے میں مردوں کے مقابلے میں زیادہ خواتین ڈاکٹروں کے پاس جاتی ہیں، زیادہ دوا لیتی ہیں، طبی وجوہات کی وجہ سے زیادہ دن کام سے چھٹیاں لیتی ہیں اور ہسپتالوں میں زیادہ دن گزارتی ہیں۔’

اس میں مزید کہا گیا ہے کہ بنگلہ دیش، چین، مصر، گواٹےمالا، انڈیا، انڈونیشیا، جمیکا، ملائیشیا، میکسیکو، فلپائن، تھائی لینڈ اور تیونس میں خواتین کو بڑھاپے میں زیادہ جسمانی پریشانیاں ہوتی ہیں۔

فرق کم ہو رہا ہے

حالیہ تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ مستقبل قریب میں مرد اور خواتین کی طویل عمر میں جو فرق ہے کم ہو جائے گا


  • 38
  •  
  •  
  •  
  •  
    38
    Shares

اترك تعليقاً

This site is protected by wp-copyrightpro.com