میلتوس نے گولڈ میڈل جیت لیا

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

جرمنی کے شہر برلن میں ہونے والے ایتھلیٹکس کے مقابلوں میں یونان سے تعلق رکھنے والے20 سالہ نوجوان ملتوس نے پارکور کے مقابلوں میں یونان کے لیے گولڈ میڈل جیت لیا۔

ملتوس کا تعلق گریوینا یونان سے ہے ملتوس نے سفر کا آغاز15  سال کی عمر میں کیا جب وہ حادثاتی طور پر اس کھیل میں آیا۔جہاں اس کی ملاقات نیکوس سے ہوئی جو مشہور زمانہ کوچ تھا نیکوس نے اسے دیکھتے ہی پہچان لیا کہ اس نوجوان میں بہت ٹیلنٹ ہے۔اور نیکوس کی کوششوں اور ملتوس کی انتھک محنت سے آج  ملتوس یورپین چیمپین بن چکا ہے۔

اس موقع پر ملتوس کی ماں پاپادیمتریو  کی خوشی دیدنی تھی ملتوس کی ماں نے کہا کہ مجھے ہر لمحے اس بات کا یقین تھا کے میرا بیٹا ضرور گولڈ میڈل جیتے گا۔

پاپادیمتریو کا مزید کہنا تھا کہ 15 سال کی عمر میں میرے بیٹے کو جنون کی حد تک اس کھیل کا شوق تھا جب 5 سال پہلےدسمبر میں ملتوس نے اس کھیل کی ٹرینینگ لینی شروع کی تو اگلے ہی سال مارچ میں اس نے مقامی مقابلوں میں پہلی پوزیشن حاصل کی۔

پاپا دیمیتریو نے مزید کہا کہ میرے بیٹے نے میرا اور پورے یونان کا سر فخر سے بلند کر دیا اور اگر میرا بیٹا نہ بھی جیتتا تب بھی مجھے اس پر فخر تھا۔

اس جیت کے بعد مبارکباد کے لئیے ٹیلیفون موصول ہو رہے اور ہر کوئی اپنی خوشی کا اظہار کر رہا ہے اس موقع پر ملتوس کے گاؤں میں دمارخیو کی بلڈنگ کو برقی قمقموں سے سجا دیا گیا ہے۔اور چیمپئن نوجوان کا انتظار کیا جا رہا ہے کہ جب وہ واپس آئے تو اس کا استقبال بھرپور طریقے سےکیا جائے۔


  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

اترك تعليقاً

This site is protected by wp-copyrightpro.com