ٹرمپ نے امریکہ۔ میکسیکو سرحد پر دیوار کی تعمیر پر ہنگامی صورتحال کے نفاذ کی دوبارہ دھمکی دے دی۔

  • 48
  •  
  •  
  •  
  •  
    48
    Shares

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کانگریس کی منظوری کے بغیر امریکہ اور میکسیکو کی سرحد پر دیوار کی تعمیر کے لیے ایمرجنسی یعنی قومی ہنگامی صورتحال کا اعلان کرنے کی دوبارہ دھمکی دی ہے۔

انھوں نے میکسیکو کی سرحد کا دورہ کرنے سے پہلے صحافیوں کو بتایا کہ ’میرے پاس قومی سطح پر ہنگامی صورت حال کا اعلان کرنے کا مکمل اختیار ہے۔‘

ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ میکسیکو ’بالواسطہ‘ دیوار کی تمعیر کے لیے فنڈنگ دے گا۔

خیال رہے کہ صدر ٹرمپ اس دیوار کی تعمیر کے لیے ساڑھے پانچ ارب ڈالر سے زیادہ کی رقم کا مطالبہ کر رہے ہیں۔ اس مطالبے سے جو تنازع پیدا ہوا ہے اس کے نتیجے میں حکومت کے مختلف شعبوں کو گذشتہ 20 دنوں سے جزوی ’شٹ ڈاؤن‘ یا ہڑتال کا سامنا ہے۔ اس بندش کے نتیجے میں آٹھ لاکھ وفاقی ملازمین تنخواہ سے محروم ہیں۔

اس تعطل کے نتیجے میں صدر ٹرمپ نے حکومت کو پوری طرح فنڈ کرنے والے بل کی منظوری اس وقت تک روک دی ہے جب تک انھیں سرحد پر دیوار بنانے کے لیے پیسے نہیں مل جاتے۔

ٹرمپ کا اصرار ہے کہ بجٹ میں کم از کم پانچ ارب ڈالر اس منصوبے کے لیے مختص کیے جائیں جس کے تحت وہ میکسیکو کے ساتھ سرحد پر دیوار بنا سکیں۔

تاہم بجٹ کے حوالے سے ہونے والے مذاکرات میں اس وقت تعطل پیدا ہو گیا جب ڈیموکریٹس، جن کا ایوانِ نمائندگان پر کنٹرول ہے، نے دیوار کی تعمیر کے لیے رقم دینے سے انکار کر دیا۔

امریکہ میں حکومتی جماعت رپبلکن پارٹی اور حریف ڈیموکریٹس کا دیوار کی تعمیر پر ڈیڈ لاک جس کی وجہ سے امریکہ میں ’شٹ ڈاؤن‘ ہے اور سرکاری مشینری نے کام کرنا چھوڑ دیا ہے۔

رپبلکن رہنما کا اصرار ہے ان کی جماعت صدر ٹرمپ کے پیچھے کھڑی ہے تاہم چند رپبلکنز نے شٹ ڈاؤن ختم کرنے کے حق میں بات کی کی۔


  • 48
  •  
  •  
  •  
  •  
    48
    Shares

اترك تعليقاً

This site is protected by wp-copyrightpro.com