یونان اور مقدونیہ کے بارڈر پر ہزاروں مہاجرین بارڈر کراس کرنے کے لیے جمع ،پولیس اور مہاجرین کے درمیان جھڑپیں۔

  • 859
  •  
  •  
  •  
  •  
    859
    Shares

تھیسالونیکی کے ضلع تھیاپاتا ،جو کہ مقدونیہ کے بارڈر کے قریب واقع ہے ہزاروں مہاجرین یونان سے مقدونیہ اور پھر دوسرے یورپ میں جانے کے لیے جمع ہوگئے۔

مہاجرین اور پولیس میں وقتاً فوقتاً جھڑپیں جاری ہیں جب بھی مہاجرین بارڈر کراس کرنے کی کوشش کرتے ہیں تو پولیس انہیں واپس بھیج دیتی ہے۔اسی کشمکش میں تین لوگ بھی زخمی ہو چکے ہیں جن میں ایک پولیس آفیسر بھی شامل ہے۔

ذرائع کے مطابق پچھلے کچھ دنوں سے سوشل میڈیا پر چلنے والی ایک خبر کے نتیجے میں یہ سب کچھ ہو رہا ہے جس میں یہ خبر پھیلائی گئی کہ شاید یونان دوسرے یورپ کے ساتھ بارڈر کھول رہا ہے اور مہاجرین بلا روک ٹوک دوسرے یورپین ممالک میں جا سکتے ہیں۔

اس حوالے سے یونان کے امیگریشن کے وزیر مسٹر ویچاس کا کہنا ہے کہ بارڈر پر اکٹھے ہونے والے مہاجرین کو واپس اپنے اپنے کیمپوں میں چلے جانا چاہیے اس لیے کہ یونان نے اپنے بارڈر دوسرے ممالک میں جانے کے لیے نہیں کھولے۔

مسٹر ویچا س کی اس اپیل پر کچھ مہاجرین واپس اپنے کیمپوں میں چلے گئے لیکن مہاجرین کی اکثریت نے مسٹر ویچاس کا کہنا ماننے سے انکار کر دیا اور مسلسل دوسرے روز بھی بارڈر کے قریب کھلے آسمان تلے رات گزار رہے ہیں۔

جب بھی مہاجرین بارڈر کراس کرنے کی کوشش کرتے ہیں تو پولیس کی جانب سے ان پر آنسو گیس کے شیل پھینکے جاتے ہیں جواباً مہاجرین کی جانب سے پتھر پھینکے جاتے ہیں لیکن مہاجرین واپس جانے کے لیے تیار نہیں۔


  • 859
  •  
  •  
  •  
  •  
    859
    Shares

اترك تعليقاً

This site is protected by wp-copyrightpro.com