یونان اور مقدونیہ کے درمیان12سال بعد فلائٹ سروس بحال۔

  • 144
  •  
  •  
  •  
  •  
    144
    Shares

آج 12 سال بعد مقدونیا کے درالحکومت سکوپیا اور یونان کے دارالحکومت ایتھنز کے درمیان فلائٹ سروس بحال کردی گئی۔

تفصیلات کے مطابق یونان کے ڈپٹی وزیر خارجہ یورگوس کاتروگالوس اور مقدونیہ کے ڈپٹی وزیراعظم مگار عثمانی نے اس فلائٹ میں سفر کیا اور بعد ازاں پریس کانفرنس بھی کی۔

پریس کانفرنس میں مگار عثمانی نے کہا کہ آج ایک بہت بڑا دن ہے یونان اور مقدونیہ کے لوگوں کے لیے اور ہم نے بہت بڑے مسئلے کو حل کر لیا ہے۔

یونان کے ڈپٹی وزیر خارجہ یورگوس کاتروگالوس نے پریس کانفرنس میں کہا کہ 12 سال بعد فلائٹ سروس کی بحالی دونوں ممالک کے لوگوں کو قریب لانے میں معاون ثابت ہوگی۔

واضح رہے کہ مقدونیہ اور یونان کے درمیان بارہ سال ایک چپقلش چلی آ رہی تھی جس کی وجہ مقدونیہ کا نام تھا مقدونیہ 1991 میں سابق یوگوسلاویہ سے آزاد ہوا تو یونان نے مقدونیہ نام کو کبھی بھی قبول نہیں کیا اس لئے کہ یونان کے ایک علاقے کا نام بھی مقدونیہ ہے اور اس طرح سے یونانیوں کا خیال تھا کہ مقدونیہ نام صرف اس علاقے کا ہو سکتا ہے جو یونان کے قبضے میں ہے۔

پچھلے جون میں یونان اور مقدونیہ کے درمیان ایک معاہدہ ہوا جس کے تحت مقدونیہ نے اپنا نام بدل کر مشرقی مقدونیہ رکھنے پر رضا مندی ظاہر کی۔

اس معاہدے کی باقاعدہ منظوری پارلیمنٹ نے بھی دے دی ہے اور تین مراحل میں مقدونیہ اپنا نام مشرقی مقدونیہ رکھ لے گا جبکہ مقدونیہ کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ جس کی وجہ سے یورپی یونین میں شامل نہیں ہوسکتا تھا وہ بھی ختم ہو جائے گی اس لئے کہ یونان مقدونیہ کی مخالفت نہیں کرے گا اور مقدونیہ یورپی یونین اور نیٹو میں شامل ہو سکے گا۔


  • 144
  •  
  •  
  •  
  •  
    144
    Shares

اترك تعليقاً

This site is protected by wp-copyrightpro.com