2018 کے دوران پانچ ہزار پناہ گزینوں کو ترکی واپس بھیجا گیا۔

  • 237
  •  
  •  
  •  
  •  
    237
    Shares

جرمن اخبار کے مطابق 2018 میں 5 ہزار پناہ گزینوں کو واپس ترکی بھیجا گیا یہ اس معاہدے کے تحت کیا گیا جو ترکی اور یورپی یونین کے درمیان پناہ گزینوں کے معاملے میں ہوا تھا۔

اس کے علاوہ اب بھی ترکی میں ایک لاکھ 43 ہزار شامی پناہ گزین مختلف کیمپوں میں اور بڑے شہروں میں رہائش اختیار کیے ہوئے ہیں ان شامی پناہ گزینوں کی مدد کے لیے اور ان کا معیار زندگی بہتر بنانے کے لئے یورپین یونین کی جانب سے ترکی کو سالانہ 1.5 ملین یورو امداد کی شکل میں دیے جا رہے ہیں۔

جب کہ یونان کے جزیروں میں اب بھی سہولیات سے زیادہ پناہ گزین رہ رہے ہیں رپورٹ کے مطابق اب بھی گیارہ ہزار سات سو باون افراد یونان کے جزیروں میں مختلف کیمپوں میں رہ رہے ہیں اور بدتر زندگی گزارنے پر مجبور ہیں۔

یورپ میں بالعموم اور جرمنی میں بالخصوص ان افراد کے لیے آواز اٹھائی گئی ہے جو یونان کے کیمپوں میں مشکل زندگی گزار رہے ہیں

جرمنی میں حزب اختلاف کی جماعتوں کا کہنا ہے کہ پناہ گزینوں کی زندگی کو بہتر کرنے کے لیے اقدامات کرنا یورپین یونین کی ذمہ داری ہے۔

جبکہ دوسری طرف یورپین یونین کے شہری اس بات سے بھی خوش ہیں کہ شامی پناہ گزینوں کو یورپین یونین کی حدود کے اندر امداد دینے کے بجائے ترکی میں ہی امداد دی جائے اور ان کے معیار زندگی کو بہتر بنایا جائے۔


  • 237
  •  
  •  
  •  
  •  
    237
    Shares

اترك تعليقاً

This site is protected by wp-copyrightpro.com

error: Content is protected !!