چھ ہزار یورو کے عوض دیگر یورپی ممالک کے لیے انسانی اسمگلنگ

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

یونان کے دو جزائر پر انسانی اسمگلنگ میں ملوث ایک درجن سے زائد افراد کو گرفتار کیا گیا ہے۔ گرفتار ہونے والے افراد مہاجرین کو جعلی دستاویزات فراہم کر کے دوسرے یورپی ممالک روانہ کرنے میں ملوث پائے گئے ہیں۔

یونان کے جزیروں ساموس اور کوس میں یونانی حکام نے دو مختلف گروپوں کو افراد کو حراست میں لیا، جو مہاجرین سے پیسے لے کر انہیں جعلی دستاویزات فراہم کرنے میں ملوث تھے۔ گرفتار ہونے والے ایک گروپ کے چھ افراد کوس ہوائی اڈے پر کام کرتے تھے

ان افراد کو رواں ہفتے کے دوران حراست میں لیا گیا تھا۔ ان افراد پر الزام عائد کیا گیا ہے کہ یہ چھ ہزار یورو یا تقریباً چھ ہزار سات سو امریکی ڈالر کے عوض کسی بھی مہاجر کو جعلی دستاویزات فراہم کرتے تھے تا کہ وہ بذریعہ ہوائی جہاز کسی دوسرے یورپی ملک کے لیے روانہ ہو سکے۔ تفتیشی اہلکاروں نے خیال ظاہر کیا ہے کہ مزید چھان بین سے کئی اور افراد بھی حراست میں لیے جا سکتے ہیں۔

یونانی پولیس نے مزید بتایا کہ ساموس جزیرے پر نو افراد کو حراست میں لیا گیا ہے۔ یہ ایک دوسرے گروپ سے وابستہ ہیں اور ان کا کام کسی بھی مہاجر کو جعلی ہیلتھ سرٹیفیکٹ فراہم کرنا ہیں تا کہ وہ اس جزیرے سے باہر جا سکے اور پھر کسی دوسرے یورپی ملک پہنچنے کی کوششوں میں مصروف ہو جائے۔ پولیس حکام نے کہا ہے کہ تفتیشی عمل کا دائرہ وسیع  کیا جا سکتا ہے۔

یونانی جزائر ساموس اور کوس میں مہاجرین کے کیمپوں میں گنجائش سے زائد سیاسی پناہ کے متلاشیوں کو رکھا گیا ہے۔ ان کیمپوں میں مناسب سہولیات کا بھی فقدان کی بھی خبریں گردش کرتی رہتی ہیں۔ اقوام متحدہ کی مہاجرین کی ایجنسی گزشتہ برس  یونانی حکومت سے ان کیمپوں کے لیے مزید سہولیات فراہم کرنے کا مطالبہ کر چکی ہے۔

 


  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

اترك تعليقاً

This site is protected by wp-copyrightpro.com