تارکینِ وطن کے مسئلے پر گورنمنٹ اور اپوزیشن میں گرماگرم بحث

یونان کے ایوانوں میں آج تارکین وطن کے مسئلے پر گرما گرم بحث ہوئی اپوزیشن کے سربراہ کریاکوس میچوتاکس نے گورنمنٹ کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔

میچوتاکس کا کہنا تھا کہ چھ ارب ڈالر لے کر بھی یونان کی گورنمنٹ تارکین وطن کا مسئلہ حل نہیں کر سکی اور تارکین وطن بدترین زندگی گزارنے پر مجبور ہیں۔

میچوتاکس نے مزید کہا کے ان پیسوں سے موریا اور متلینی جیسے کیمپ تعمیر کئے گئے جہاں پر تارکین وطن کے ساتھ بدترین سلوک کیا جا رہا ہے۔

اس کے علاوہ میچوتاکس نے فلےالیفتیرو کے 3 صحافیوں کی گرفتاری پر بھی گورنمنٹ کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔

جواب میں گورنمنٹ کی طرف سے سینیٹرز نے میچوتاکس کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ یونان دوسری جنگ عظیم کے بعد تارکین وطن کے سب سے بڑے مسئلے کا سامنا کر رہا ہے جبکہ میچوتاکس اور نیا دیموکراتیا مسئلے کا حل ڈھونڈنے میں مدد کرنے کے بجائے تنقید برائے تنقید کر رہے ہیں۔

اور اس پراپوگنڈہ میں اپنے ساتھ کئی صحافیوں کو بھی ملا رکھا ہے ۔

جواب دیں

This site is protected by wp-copyrightpro.com