یونان میں پنشن لینے والوں نےملک چھوڑنا شروع کر دیا۔

یونان میں بوڑھے افراد نے ملک چھوڑنا شروع کر دیا ملک چھوڑنے کی وجہ دن بدن پنشن میں کی جانے والی کمی ہے۔

تفصیلات کے مطابق کئی افراد جو پنشن لیتے ہیں غریب ممالک میں جا کر رہنے کو ترجیح دیتے ہیں اس لیے کہ وہاں پر ان کا گزارا تھوڑی پنشن میں بھی ہو سکتا ہے۔

جیسا کہ یودگو جس کی پنشن 800 یورو ہے اور وہ  تھیسلونیکی میں رہتا تھالیکن اس نے تھیسلونیکی کو خیر باد کہا اور صوفیہ میں جا کر رہنا شروع کردیا جہاں 800 یورو پنشن میں اس کا آسانی سے گزارا ہو سکتا ہے اور اس کے پاس کچھ پیسے بھی بچ جاتے ہیں جن سے وہ وقتافوقتا یونان بھی آتا جاتا رہتا ہے۔

صوفیہ میں یونان کی نسبت بہت کم مہنگائی ہے جہاں پر پنشنر بھی اپنی زندگی اچھے طریقے سے گزار سکتے ہیں جبکہ اس کی نسبت تھیسلونیکی اور ایتھنز میں رہنے کے لیے کم پنشن میں گزارا کرنا ناممکن ہو چکا ہے۔

زمینی حقائق کو مدنظر رکھتے ہوئے یونان کی گورنمنٹ نے پنشنر افراد کی مزید پنشن نہ کاٹنے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ لوگوں کو مزید مشکلات سے بچایا جا سکے۔

جواب دیں

This site is protected by wp-copyrightpro.com