جرمن زبان کا ٹیسٹ خاندانوں میں دوری کی سب سے بڑی وجہ۔

جرمنی میں فیڈرل بورڈ آف امیگریشن کے مطابق جرمن زبان کا ٹیسٹ پاس نہ کرنا خاندانوں میں دوری کی سب سے بڑی وجہ بن چکا ہے۔

ذرائع کے مطابق اس سال 48140افراد نے جرمن زبان کا ٹیسٹ دیا جس میں سے 1626 افراد جرمن زبان کا ٹیسٹ پاس کرنے میں کامیاب ہوسکے اور اپنے خاندانوں سے ملنے کے لئے ویزا حاصل کرنے کے اہل قرار پائے۔

تفصیلات کے مطابق جرمنی میں بسنے والے ایسے افراد جو اپنے خاندان کے لوگوں کو جرمنی میں جوائن کرنا چاہتے ہیں ایسے افراد کے لئے ویزا حاصل کرنے کی سب سے بڑی شرط یہ ہے کہ وہ جرمن زبان کا ایک ٹیسٹ پاس کریں اس ٹیسٹ کے پاس کرنے کے بعد ہی جرمنی کا ویزا مل سکتا ہے۔

فیڈرل بورڈ آف امیگریشن کی جانب سے شائع کردہ تفصیلات کے مطابق جرمن زبان کا A1 ٹیسٹ دینے والوں کی تعداد میں ہر سال اضافہ دیکھا جارہا ہے 2016 میں 39850 افراد نے یہ ٹیسٹ دیا یہ تعداد 2017 میں بڑھ کر 42000 ہوگئی جبکہ 2018 میں 48140 افراد نے یہ ٹیسٹ دیا۔

اسی تناسب سے اس ٹیسٹ میں فیل ہونے والوں کی تعداد میں بھی اضافہ دیکھا جارہا ہے۔جرمنی میں فیملی ممبرز کو جوائن کرنے کے لیے ویزے کی پہلی شرط کے ٹیسٹ سے اسرائیل، یورپین یونین اور امریکہ کے شہریوں کو چھوٹ حاصل ہے۔

اس حوالے سے دلچسپ بات یہ ہے کہ جرمن زبان کے ٹیسٹ میں سب سے زیادہ فیل ہونے والوں میں عراقی شہری شامل ہیں جن کی تعداد 900 ہے۔

جواب دیں

This site is protected by wp-copyrightpro.com