یورپ پہنچنے کے لیے’نئے بلقان روٹ‘ کے استعمال میں اضافہ

مہاجرین کی ایک بڑی تعداد مغربی یورپ میں داخلے کے لیے سربیا اور مونٹی نیگرو کے راستے بوسنیا پہنچ رہی ہے۔ بوسنیا میں امیگریشن حکام کے مطابق ان تارکین وطن کی اکثریت کا تعلق شام، الجزائر، پاکستان اور افغانستان سے ہے .

مہاجرین کے حوالے سے تازہ ترین خبریں اور اطلاعات شائع کرنے والی یورپی ویب سائٹ ’انفو مائیگرنٹس‘ نے بوسنیا کی بارڈر پولیس کا حوالہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ سال 2019 کے آغاز ہی میں بوسنیا پہنچنے والے مہاجرین کی تعداد چار سو ساٹھ کے قریب ہو گئی ہے جبکہ گزشتہ تمام برس میں یہ تعداد سات سو چون رہی تھی.

بوسنیا میں امیگریشن کے عملے کا کہنا ہے کہ یہ مہاجرین مغربی یورپ کی طرف اپنا سفر شروع کرنے سے پہلے بوسنیا میں دو سے تین راتیں قیام کرتے ہیں۔

 ان مہاجرین میں سے بعض نے پہلے بھی سربیا کے راستے یورپی یونین ملک ہنگری میں داخل ہونے کی کوشش کی تھی تاہم انہیں واپس دھکیل دیا گیا تھا۔ اب یہ تارکین وطن مونٹی نیگرو سے بوسنیا اور پھر وہاں سے کروشیا داخلے کی کوشش کر رہے ہیں۔

 

جواب دیں

This site is protected by wp-copyrightpro.com