یونان پہنچنے کی کوشش میں بچوں سمیت گیارہ سمندر میں ڈوب کر ہلاک۔

پناہ گزينوں کی ايک کشتی ترکی اور يونان کے درميان بحيرہ ايجيئن ميں ڈوبنے سے گیارہ لوگ مارے گئے ہیں، جن میں آٹھ بچے شامل تھے۔

يہ واقعہ ہفتے کو ترک ساحلی شہر چشمے کے قريب پيش آيا، جو يونانی جزيرے خيوس کے پاس ہے۔

کشتی پر کل انيس افراد سوار تھے، جن میں سے آٹھ کو بچا لیا گيا۔ تازہ واقعے ميں ہلاک ہونے والوں کی شہريت فی الحال واضح نہيں۔ ان واقعات کے باوجود پناہ گزين اب بھی يورپ پہنچنے کے ليے خطرناک سمندری راستے اختيار کر رہے ہيں۔ ان لوگوں کی اکثریت افغانستان، عراق اور شام سے ہوتی ہے۔

جواب دیں

This site is protected by wp-copyrightpro.com